بلوچستان کے طلباء کو دنیاکے مد مقابل لانے کیلئے جدید طرز تعلیم انتہائی اہم ہے : وائس چانسلر بیوٹمز

0

کوئٹہ : وائس چانسلر بیوٹمز احمد فاروق بازئی نے کہا ہے کہ بلوچستان کے طلباء کو دنیا بھر کی جامعات کے طلباء کے مد مقابل لانے کیلئے جدید طرز تعلیم اور دور حاضر کے تقاضوں سے ہم آہنگ تحقیقی علوم کو نصاب میں شامل کرناانتہائی اہم ہے۔تدریسی علوم اور درسی طریقہ کار سمیت جامعات کے نصاب کو لمحہ بہ لمحہ بدلتے معاشی و اقتصادی حالات،سائنسی ایجادات سمیت ترقی کی رفتار کے مطابق ڈھلنا وقت کی اہم ضرورت ہے۔طلباء کو بہترین تعلیمی زیور سے آراستہ کرنے کے ساتھ ساتھ مستقبل کی جانب رہنمائی، جدیدرا ہوں کی شناخت اور سمتی تعین بھی اساتذہ کی اولین ذمہ داری ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بیوٹمز کے23ویں اکیڈمک کونسل کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ تعلیمی فتوحات اور جدید علوم کی بروقت طلباء تک منتقلی بلوچستان یونیورسٹی آف انفارمیشن ٹیکنالونی انجینئرنگ اینڈ منیجمنٹ سائنسز کا خاصہ ہے، تعلیمی صلاحیت اور مؤثر حکمت عملی کو برقرار رکھتے ہوئے بیوٹمز اس امر پر بھر پور توجہ مرکوز کیے ہوئے ہے کہ ہر طالب علم حال اور مستقبل قریب کے تحقیقی و تعلیمی تجربات سے استفادہ کرے جس کے لئے بیوٹمزکے سینئر اساتذہ اور محققین نصاب کو جدید علوم سے ہم آہنگ رکھنے کے لئے کاربند ہیں۔بیوٹمز کے23ویں اکیڈمک کونسل کے اجلاس میں جامعہ کی تعلیمی صلاحیت،موجودہ تدریسی عمل کی جانچ،نئے تعلیمی کورسز کا اجراء اور دیگر تعلیمی و انتظامی امور زیر غور آئے۔وائس چانسلر بیوٹمز احمد فاروق بازئی نے اجلاس کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ علم کے ساتھ ساتھ طلباء میں دانشمندی اور سوچ بچار کرنے کے عمل کو بھی پروان چڑھانے کی اشد ضرورت ہے انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے طلباء کیلئے جامعات کی سطح پر علم کی فراہمی انتہائی آسانی اور ان کی دسترس میں لانے کے لئے بھی ہر ممکن اقدام کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ سینئر اساتذہ کے ساتھ ساتھ جونیئر اساتذہ بھی ریسرچ پر زور دیں۔اجلاس میں بیوٹمز کی تمام فکلٹیز کے ڈینز اور سینئر اساتذہ کے ساتھ ساتھ انتظامی امور کے افسران بھی شریک ہوئے فکلٹیز کے ڈینز نے اپنے اپنے ڈیپارٹمنٹس کی کارکردگی اور مستقبل کے لائحہ عمل پر وائس چانسلر بیوٹمز کو جامع بریفنگ دی۔23ویں اکیڈمی کونسل کے اجلاس میں مرتب ہونے والی گزارشات اور فیصلوں کو حتمی شکل دینے کے بعد وائس چانسلر بیوٹمزاحمد فاروق بازئی نے ان گزارشات پر فوری عمل کی ہدایت کی جبکہ مختلف ڈیپارٹمنٹس کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے کارکردگی میں تسلسل قائم رکھنے کی تلقین کی۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.